دنیا کا خطرناک ترین وائرس چین کی لیبارٹری میں تیار

دنیا کا خطرناک ترین وائرس چین کی لیبارٹری میں تیار کیا گیا ہے۔
چینی محققین نے ایک منقلب وائرس GX_P2V پر ایک تحقیق شائع کی ہے جس نے عالمی سطح پر خوف اور تشویش کا اظہار کیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق چینی محققین نے بیجنگ میں انسانی جینیات کے حامل چوہوں پر GX_P2V وائرس کے تجربات کئے ، جس کے نتیجے میں چوہوں میں موت کی شرح 100٪ پائی گئی۔

GX_P2V ایک منقلب وائرس ہے، جس کا تعلق کورونا وائرس کے ‘خاندان’ سے ہے۔ یہ 2017 میں ملائیشیا میں پینگولین (جانوروں) میں دریافت ہوا تھا۔ اس وائرس کے ساتھ اپنی نوعیت کے پہلے تجربے میں GX_P2V سے متاثرہ چوہوں میں 100٪ اموات ظاہر کی گئیں۔ یہ شرح اموات پچھلے نتائج سے زیادہ ہے۔

ماہرین نے نوٹ کیا کہ GX_P2V سے متاثرہ تمام چوہے آٹھ دن کے اندر مر گئے، جو کہ حیرت انگیز طور پر تیزی سے موت کی شرح ہے،GX_P2V چوہوں میں وزن میں کمی، سست حرکت اور جسم کا جھکاؤ دیکھا گیا، اس نے پھیپھڑوں، ہڈیوں، آنکھوں، گلے اور دماغ کو متاثر کیا اور مرنے سے اگلے دن ان کی آنکھیں بالکل سفید ہو گئیں۔

کورونا وائرس کا اصل ذریعہ ابھی تک معلوم نہیں ہوسکا تاہم چین کی لیبارٹری میں GX_P2V وائرس کے تجربات نے ایک بار پھر عالمی سطح پر خدشات کو تقویت دی ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept