پشین اور کوئٹہ میں بم دھماکے ،25 افراد جاں بحق

صوبۂ بلوچستان کے ضلع پشین میں خانوزئی کے علاقے میں آزاد امیدوار کے دفتر کے باہر دھماکے کے نتیجے میں 15 افرا د جبکہ کوئٹہ میں قلعہ سیف اللہ میں جے یوآئی کے دفتر کے باہر دھماکہ سے8 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں
ابتدائی اطلاعات کے مطابق ,متعدد افراد زخمی ہیں جن میں سے 4 کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔
یہ علاقہ کوئٹہ سے 170 کلو میٹر دور ہے، جے یو آئی کے مولانا سمیع الحق یہاں سے الیکشن لڑ رہے ہیں۔

پولیس کے مطابق دھماکےکے وقت کارکنوں کی بڑی تعداد دفترمیں موجودتھی۔

صوبۂ بلوچستان کے ضلع پشین میں خانوزئی کے علاقے میں آزاد امیدوار کے دفتر کے باہر دھماکے کے نتیجے میں 17افراد جاں بحق ہوگئے۔

ذرائع کے مطابق خانوزئی میں پی بی 47 میں دھماکا انتخابی امیدوار اسفند یار کاکڑ کے دفتر کے باہر ہوا۔

اسپتال حکام کے مطابق دھماکے میں 30 سے زائد افراد زخمی ہوئے جنہیں تحصیل اسپتال خانوزئی منتقل کردیا گیا ہے۔

سیکریٹری صحت کے مطابق کوئٹہ کے اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر کے اضافی عملے کو طلب کرلیا گیا ہے۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے اس واقعے کا نوٹس لے کر چیف سیکریٹری اور آئی جی بلوچستان سے فوری رپورٹ طلب کرلی ہے۔

الیکشن کمیشن کے ترجمان کے مطابق ہدایت کی گئی ہے کہ ان واقعات میں ملوث افراد کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔

’دھماکا موٹرسائیکل میں ہوا‘

بعدازاں آزاد امیدوار اسفند یار کاکڑ نے جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ دھماکا میرے انتخابی دفتر کے باہر موٹرسائیکل میں ہوا، 8 کارکن شہید اور 18سے زائد زخمی ہوئے۔

اسفند یار کاکڑ نے کہا کہ انتخابی دفتر میں پولنگ ایجنٹس کے نام فائنل کیے جارہے تھے، دھماکے کے وقت میں برشور میں تھا، خانوزئی پہنچ رہا ہوں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept